شعیب اختر نے وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کو ہندو کہہ دیا ،اے آ ر وائے نیوز کا واویلا ،لیکن در اصل فاسٹ باولر نے کیا کہا تھا ؟اصل حقیقت ایسی کہ کوئی سوچ بھی نہیں سکتا تھا

لاہور آن لائن )آج کل پاکستانی میڈ یا کی جانب سے غلط خبریں دینے اور حقائق کو توڑ مروڑ کر پیش کیے جانے پر عوام میں کافی زیاد تشویش پائی جاتی ہے ،ایسی صورتحال میں جب ملک کی سیاسی قیادت کی جانب سے نیوز چینلز پر غلط خبریں نشر کرنے کے الزامات لگائے جاتے ہیں تو عوام کی تشویش میں مزید اضافہ ہو جاتا ہے ۔اب ایسا ہی کام نجی نیوز چینل ا ے آر وائے نیوز نے کیا ،جس نے فاسٹ باولر شعیب اختر سے منسوب بیان کر غلط انداز میں پیش کیا اور کہا کہ شعیب اختر نے شاہد خاقان عباسی کو ہندو کہہ دیا ہے ۔

تفصیل کے مطابق آج صبح مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر شعیب اختر وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کی تقریب حلف برداری کی تصویر شیئر کرتے ہوئے پیغام دیا کہ ہندو سیاسی رہنما اب پاکستان کی وفاقی کابینہ کا وزیر ہے ،یہ پاکستان کو سیکولر ریاست کہنے کا ہمارا شائستہ طریقہ ہے ۔فاسٹ باولر کی اس ٹوئٹ پر اے آر وائے نیوز نے خبر دی کہ شعیب اختر نے شاہد خاقان عباسی کو ہندو رہنما کہہ دیا ،انہوں نے کہا کہ تصویر میں شاہد خاقان عباسی حلف اٹھا رہے ہیں تو ہم اندازہ لگا سکتے ہیں کہ ہندورہنما کی بات کر تے ہوئے شعیب اختر کا اشارہ شاہد خاقان عباسی کی جانب ہے اور انہوں نے غلطی سے شاہد خاقان عباسی کو ہندو رہنما کہہ دیا۔اے آر وائی نیوز کی یہ خبر سوشل میڈ یا پر پھیل گئی اور لوگوں نے اپنے جذبات کا اظہار کیا تو ایک بار پھر شعیب اختر میدان میں آگئے اور انہوں نے وضاحت دیتے ہوئے کہا کہ دوستوں ،میری ذہانت پر سوال اٹھانے کے بجائے میرے پیغام پر توجہ دیں ،ہم سب مذاہب کا احترام کرتے ہیں ،ویسے تقریب حلف برداری کی تصویر صرف ریفرنس کے طور پر پیش کی گئی تھی ۔