قطر نے جنگ کی پکی تیاری کرلی، 600 ارب روپے کا کونسا ہتھیار خرید لیا؟ جان کر عرب ممالک کے ہوش اُڑجائیں گے

دوحہ (مانیٹرنگ ڈیسک) ایک ایسے وقت پر کہ جب سعودی عرب اور اس کے ساتھی ممالک نے قطر کا ناطقہ بند کر رکھا ہے، اس ملک نے اپنے دفاع کے لئے خطرناک ہتھیاروں کی خریداری کا اتنا بڑا معاہدہ کر لیا ہے کہ یقینا اسے دھمکیاں دینے والے عرب ممالک کوئی قدم اٹھانے سے پہلے سو بار سوچیں گے۔

ویب سائٹ ’یوکے ڈیفنس جرنل‘ کی رپورٹ کے مطابق قطر نے 5.9ارب ڈالر (تقریباً 600 ارب پاکستانی روپے) مالیت کے سات جنگی بحری جہاز خریدنے کیلئے اٹلی کے ساتھ معاہدہ کرلیا ہے۔ اس بات کا انکشاف قطری وزیر خارجہ شیخ محمد بن عبدالرحمان الثانی نے دوحہ میں کی گئی ایک پریس کانفرنس کے دوران کیا۔ قطری وزیر خارجہ کا کہنا تھا ”ہم نے قطری بحریہ کے ایماءپر معاہدے پر دستخط کئے ہیں جس کے تحت اٹلی سے سات جنگی بحری جہاز 5.9 ارب ڈالر میں خریدے جائیں گے۔“

اس معاہدے کے مطابق اٹلی قطر کو چار کوروٹ، ایک ایمفیبیس بحری جہاز اور دو پٹرول بوٹ فروخت کرے گا۔ صرف یہی نہیں بلکہ محض دو ماہ قبل قطر نے امریکہ سے بھی 12 ارب ڈالر (تقریباً 12 کھرب پاکستانی روپے) کے F-15 جنگی جہاز خریدنے کا معاہدہ کیا ہے۔ دفاعی تجزیہ کاروں کا کہناہے کہ قطر کی جانب سے اتنی بھاری مقدار میں اسلحے کی خریداری ظاہر کرتی ہے کہ یہ اپنے عرب ہمسایوں کی جانب سے متوقع کسی بھی خطرے سے نمٹنے کی تیاری کر رہا ہے۔