امریکا کےپاس شمالی کوریا کے مسئلہ کا فوجی پلان تیار ہے۔۔

امریکی محکمہ دفاع نے کہا ہے کہ شمالی کوریا کے بڑھتے ہوئے خطرے کا فوجی حل موجود ہے تاہم امریکا چاہتا ہے کہ اتحادی ممالک کے ذریعے سفارتی کوششوں سے اس مسئلے کو حل کیا جائے۔ صدر ٹرمپ کہتےہیں کہ لگتا ہے کہ شمالی کوریا کو دی گئی وارننگ زیادہ سخت نہیں تھی۔ ایک تقریب سے خطاب کے دوران وزیر دفاع جیمز میٹس نےکہاکہ چین چاہے تو اس مسئلے کو حل کراسکتا ہے۔جیمز میٹس کا کہنا تھا کہ ہمارے اتحادی ممالک سے قریب رابطے بھی ہیں تاکہ شمالی کوریا کے خلاف مشترکہ ایکشن لیا جاسکےاور بحیثیت وزیر دفاع میرے پاس شمالی کوریا کے خلاف عسکری آپشن بھی موجود ہے۔
صدر ٹرمپ نےنیو جرسی میں ایک تقریب سے خطاب میں کہا ہے کہ بیجنگ شمالی کوریا پر دبائو ڈال کو اس کا ایٹمی پروگرام ختم کراسکتا ہےاور چین شمالی کوریا کے مسئلے پر بہت کچھ کرسکتا ہے۔ جیمز میٹس کا کہنا تھا کہ اس وقت ہماری کوشش ہے کہ دیگر اتحادی ممالک کے ساتھ مل کر شمالی کوریا کے بڑھتے ہوئے خطرے کو سفارتی کوششوں سے حل کیا جائے۔