’’ جیسے ہی بسم اللہ پڑھنا شروع کرتا ہوں مصیبتیں ٹل جاتی ہیں‘‘ بسم اللہ شریف کی برکات سے فیض پانے کا وظیفہ

انسان کسی بھی وقت کسی مصیبت اور تکلیف میں مبتلا ہوسکتا ہے۔اس ناگہانی صورت حال میں جہاں انسان اپنی تدبیر کرتا ہے وہاں اسکو چاہئے کہ کثرت سے بسم اللہ الرحمن الرحیم پڑھنا شروع کردیا کرے۔یہ آزمودہ اور مجرب عمل ہے۔میں نے بارہا بسم اللہ شریف کے ذاکرین کے مصائب ٹلنے کے واقعات سنے ہیں۔ایک صاحب اپنا یہ تجربہ بیان کرتے ہیں کہ انہیں جب بھی گاڑی چلاتے ہوئے ٹریفک جام میں پھنس جانا پڑا اور ایسے آثار دکھائی دیئے کہ ٹریفک کھلنے میں بڑا وقت لگ جائے گا تو وہ بسم اللہ شریف پڑھنا شروع کردیتے ہیں۔اللہ کی رحمت سے ٹریفک کا بہاؤ شروع جاتا ہے اور وہ جلد ہی اس کوفت سے بچ نکلتے ہیں۔

بسم اللہ شریف کی برکات کے حوالہ سے کئی احادیث موجود ہیں۔ سنائی میں بیان کیا جاتا ہے کہ میدان جنگ میں سیدنا طلحہؓ کی انگلیاں کٹ گئیں تو ان کے منہ سے ’’سی‘‘ کی آواز نکلی، تو سرکار دوجہاںﷺ نے فرمایا ’’اگر تم بسم اللہ الرحمن الرحیم پڑھ لیتے تو فرشتے تجھے اوپر اٹھا لیتے۔‘‘ اس سے بسم اللہ کی فضیلت عیاں ہوجاتی ہے ،کھانے پینے چلنے دوڑنے سونے سمیت ہر کام میں بسم اللہ شریف پڑھتے رہنا چاہئے ۔بسم اللہ الرحمن الرحیم کا روزانہ تین سو تیرہ بار وظیفہ پڑھنے والوں کو ملکوتی قوت حاصل ہوجاتی ہے۔جن بچیوں کی شادیوں کے رشتے نہ آرہے ہوں ،وہ اس کا وظیفہ کریں،یتیم بچوں بچیوں کو بسم اللہ شریف کے وظیفہ سے بے حد تقویت ملتی ہے۔روحانی بندش اور قبض کے خاتمہ میں بسم اللہ کا وظیفہ بے حد اثر پیدا کرتا ہے۔
۔۔
پیر ابو نعمان رضوی سیفی فی سبیل للہ روحانی رہ نمائی کرتے اور دینی علوم کی تدریس کرتے ہیں ۔ان سے اس ای میل پررابطہ کیا جاسکتا ہے۔[email protected]