افغانستان میں نجی ٹی وی چینل کے دفتر پر حملہ، ایک شخص ہلاک

افغانستان کے دارالحکومت کابل میں ایک نجی ٹی وی چینل کے دفتر پر دہشت گردوں کے حملے میں ایک شخص ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے۔

افغان نشریاتی ادارے طلوع نیوز کے مطابق نجی چینل شمشاد ٹی وی پر دو سے تین دہشت گردوں نے صبح 10 بجکر 45 منٹ پر حملہ کیا۔

حملہ آوروں میں سے ایک نے خود کو عمارت کے دروازے پر مبینہ طور پر دھماکا خیز مواد سے اڑا لیا جبکہ اس کے ساتھ موجود دیگر ساتھیوں نے فائرنگ شروع کردی۔

رپورٹس کے مطابق شمشاد ٹی وی کے ملازمین نے طلوع نیوز کو بتایا کہ دہشت گرد عمارت کے احاطے میں گھس گئے ہیں اور فائرنگ کا سلسلہ جاری ہے جس میں اب تک کی اطلاعات کے مطابق ایک شخص ہلاک اور 3 افراد زخمی ہوگئے۔

افغان وزارتِ داخلہ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ سیکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے اور دہشت گردوں کے خلاف کارروائی جاری ہے۔

طلوع نیوز کے مطابق شمشاد ٹی وی کی عمارت اور اولمپک کمیٹی کی عمارت ساتھ ساتھ ہونے کی وجہ سے شمشاد ٹی وی کے 25 افراد کو وہاں سے نکالا گیا۔

تاہم اس حملے میں ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے جبکہ طالبان نے اس حملے میں ملوث ہونے کی تردید کردی۔

خیال رہے کہ گزشتہ کچھ ماہ کے دوران افغانستان میں بڑے پیمانے پر دہشت گردوں کی کارروائیوں میں متعدد افغان شہری اور سیکیورٹی فورسز کے متعدد افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

گزشتہ ماہ افغانستان کے دارالحکومت کابل کی مساجد میں دو الگ الگ دھماکوں کے نتیجے میں 60 افراد ہلاک اور55 زخمی ہوگئے تھے۔

اس واقعے سے ایک روز قبل افغانستان کے صوبے قندھار میں افغان نیشنل آرمی کے ایک بیس کیمپ پر خود کش حملے کے نتیجے میں 41 اہلکار ہلاک اور 24 زخمی ہوگئے تھے جبکہ دو روز قبل جنوب مشرقی صوبے پکتیا میں قائم پولیس ٹریننگ سینٹر پر ہونے والے خود کش حملے اور مسلح جھڑپ کے نتیجے میں 32 افراد ہلاک اور 200 سے زائد زخمی ہوگئے تھے۔