ایران، عراق زلزے سے جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 450 ہوگئی

ایران اور عراق کے سرحدی علاقوں میں آنے والے خوفناک زلزلے میں جاں بحق ہونے والوں کی تعداد چار سو پچاس تک جاپہنچی ہے ،،حکام کے مطابق ابھی بھی درجنوں زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے،،ادھر امدادی سرگرمیوں کا سلسلہ بھی جاری ہے۔
ایران اور عراق میں آنے والے خوفناک زلزلے کے آفٹر شاکس کا سلسلہ بدستور جاری ہے جنکی شدت ریکٹر اسکیل پر چار سے پانچ کے درمیان ریکارڈ کی جارہی ہے آفٹر شاکس سے خوفزدہ لوگ کھلے آسمان تلے سونے پر مجبور ہیں سردی کی شدت میں اضافے کی وجہ سے شہریوں کو کھلے آسمان تلے شدید مشکلات کا سامنا ہے۔
حکام کے مطابق ایران میں زلزلے سے 8 دیہات میں نقصان ہوا، بجلی اور مواصلات کا نظام بھی متاثر ہواحکام کا کہنا ہے کہ سب سے زیادہ تباہی ایرانی صوبے کرمانشاه‎‎ کے علاقے سرپل ذهاب میں ہوئی۔ ملبے تلے تاحال لوگ دبے ہوئے ہیں، جس کے باعث جاں بحق افراد کی تعداد میں مزید اضافہ ہو سکتا ہے،،صوبے میں تین روزہ سوگ کا اعلان کیا گیا ہے۔
ایرانی حکام کے مطابق زلزلے کے شدید جھٹکوں کی وجہ سے کئی عمارتیں اب رہنے کے قابل نہیں رہی ہیں جبکہ مکمل طور پر منہدم ہونےوالے گھروں کی تعداد ہزاروں میں ہے جسکی وجہ سے ستاسی ہزار افراد بے گھر ہوئے ہیں بے گھر ہونے والے افراد کےلئے شیلٹرز بنانے کا کام بھی تیزی سے جاری ہے۔