مرغی کو جنسی طور ہر ہراساں کرنے کے جُرم میں نوجوان گرفتار

اسلام آباد (ویب ڈیسک) خواتین اور نوجوان لڑکیوں کو تو جنسی درندگی کا نشانہ بنتے سُنا ہی تھا لیکن اب جانور بھی اس درندگی کا شکار ہوتے نظر آ رہے ہیں۔ پاکستان کے وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں ایک نوجوان کو مرغی کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کے جُرم میں گرفتار کر لیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق نوجوان نے مرغی کو جنسی طور پر ہراساں کیا اور اس کے بعد اسے مار دیا۔

ایکسپریس ٹربیون کی رپورٹ کے مطابق 14 سالہ نوجوان نے 14 نومبر کو جلال پور بھٹیاں کے قریب ایک مرغی کو ہراساں کیا۔ مرغی کے مالک نے پولیس اسٹیشن میں ایک شکایت درج کروائی جس کے مطابق نوجوان نے مرغی کو اُٹھایا اور اپنے گھر لے گیا جہاں اسے جنسی ہراسگی کا نشانہ بنانے کے بعد مار دیا۔ مرغی کے مالک نے دو مقامی افراد کو بطور گواہ اپنی شکایت میں نامزد کیا۔
جلال پور بھٹیاں کے ایس ایچ او سرفراز انجم کا کہنا تھا کہ نوجوان کو مرغی کی میڈیکل رپورٹ آنے کے بعد گرفتار کیا گیا جس میں مرغی کو جنسی طور پر ہراساں کیے جانے کی تصدیق ہوئی۔ انہوں نے بتایا کہ 14 سالہ ملزم نے بھی اپنے جُرم کا اعتراف کیا ہے۔ نوجوان محض 14 برس کا ہے لیکن اس نے یہ سب اپنی جنسی ہوس کو پورا کرنے کے لیے کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ مرغی سے حاصل کیے گئے سیمپلز کی رپورٹ آنا تاحال باقی ہے۔ ملزم کو آج غیر فطری فعل کے جُرم میں مجسٹریٹ کی عدالت میں پیش کیا جائے گا۔