” بڑا دھماکہ ہوا اور کالا کتا قبر سے نکل بھاگا، اس نے بتایاکہ ….“ ایک اللہ والے نے جب کتے سے پوچھا کہ وہ کون ہے تو اس نے ایسا انکشاف کیا کہ اس سورہ مبارکہ کو پڑھنے والوں کا اسکی فضیلت پرایمان مزید مضبوط ہوجائے گا

مرنے کے بعد کے ساتھ صرف اسکے نیک اعمال جاتے ہیں۔محمد عبداللہ ابن اسعد یمنی کی مولفہ کتاب قصص الاولیا میں ایک ایسے شخص کے بارے میں واقعہ بیان کیا گیا ہے جس میں عارف باللہ فرماتے ہیں ”ملکِ یمن کے شہروں میں ، میں نے بعض صالحین سے سنا ہے۔ فرماتے تھے کہ ایک میت کو دفن کر کے جب لوگ واپس آنے لگے تو قبر سے ایک بڑے دھماکہ کی آواز آئی اور قبر سے ایک کالا کتا نکل بھاگا۔ ایک بڑے صالح آدمی وہیں تھے، انہوں نے اس کتے سے کہا ” تیرا ناس ہو، تو کون سی بلا ہے؟“
وہ بولا” میں اس میت کا بد عمل ہوں“

انہوں نے پوچھا” یہ جو آواز آئی تھی اس کی چوٹ تیرے لگی تھی یا میت کے؟ “
کہا ”میرے ہی لگی تھی۔ وجہ یہ ہوئی کہ وہ سورة یسین کا ورد رکھتا تھا۔جس کی وجہ سے میں اُس کے پاس تک نہ جاسکا اور مجھے مار کر نکال دیا گیا “
بے شک اس شخص کے نیک عمل قوی تھے۔ اللہ تعالیٰ کی رحمت و عنایت سے وہ بداعمال پر غالب آ گئے۔ اگر بداعمال قوی ہوتے تو وہی غالب آ جاتے اور اُسے عذاب اور طرح طرح کی تکلیفیں دلاتے۔