القدس ہمیشہ فلسطین کا دارلحکومت ہی رہے گا: محمود عباس

فلسطینی صدر محمود عباس نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اقدام کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہےکہ القدس الشریف فلسطین کا حصہ تھا اور رہے گا اور اسکی اس تاریخ حیثیت کو کوئی تبدیل نہیں کرسکتا ہے۔
فلسطین کے صدر محمود عباس نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے واشنگٹن کے سفارتخانے کو تل ابیب سے مقبوضہ بیت المقدس منتقلی کے اعلان کو قیام امن کی کوششوں پر کاری ضرب قرار دیتے ہوئے اسے بین الاقوامی امنگوں کی خلاف ورزی سے تعبیر کیا ہے۔
مزید پڑھیں: امریکا نے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرلیا
ان کا کہنا تھا کہ القدس عظیم اور قدیم فلسطینی ریاست کا درالحکومت ہے جس کی شناخت ایسے فیصلوں سے تبدیل نہیں کی جا سکتی انھوں نے کہا کہ فلسطینی قیادت دوست ملکوں کے مشورے سے اس سلسلے میں فیصلے کرنے میں مصروف ہے اور آنے والے دنوں میں فلسطینیوں کی جانب سے معاملے کی پیروی کے لئے دوست ملکوں سے رابطے کئے جائیں گے۔
یہ بھی جانئیے: امریکی فیصلے کے خلاف دنیا بھر میں شدید ردعمل
انکا کا مزید کہنا تھا کہ ڈونلڈ ٹرمپ کا سفارتخانے کی منتقلی سے متعلق اعلان دراصل امریکا کا امن عمل کی نگرانی سے دست کشی کا اعلان ہے۔