’میرے والد نے میر لئے کروڑوں روپے چھوڑے، ان کی موت کے بعد اب میں شادی کرنا چاہتی ہوں بے شک مرد پہلے سے شادی شدہ بھی ہوں کیونکہ۔۔۔‘ کروڑ پتی سعودی خاتون نے ٹی وی پر آکر ایسی بات کہہ دی کہ اب مردوں کی لمبی لائن لگ جائے گی

ریاض(مانیٹرنگ ڈیسک) شادی بیاہ کے معاملات میں مشرق کی روایات قابل رشک ہیں لیکن بدقسمتی سے بعض اوقات والدین ان روایات کی آڑ میں اپنے بچوں کی زندگی اجیرن کرنے کا سبب بھی بن جاتے ہیں۔ شاید یہی وجہ تھی کہ ایک سعودی خاتون کو جب بالآخر اپنے باپ کی وفات کے بعد شادی کا موقع ملا تو رشتہ ڈھونڈنے کے لئے ایک ٹی وی شو کا سہارا لینے سے بھی نہیں ہچکچائی۔

یہ خاتون ’الرسالہ‘ ٹی وی چینل پر پیش کئے جانے والے مقبول پروگرام ’زاویہ الزیر‘کے ذریعے اپنے لئے خاوند تلاش کرنے کی کوشش کررہی ہے۔ جب اس سے پوچھا گیا کہ ابتک اس کی شادی کیوں نہیں ہوئی اور وہ کس طرح کا شریک حیات چاہتی ہے تو اس خاتون نے بتایا ’’میرے والد جب تک زندہ تھے انہوں نے مجھے شادی کی اجازت نہیں دی کیونکہ انہیں ہمیشہ یہ خدشہ لاحق رہتا تھا کہ جو بھی شخص مجھ سے شادی کرے گا وہ ان کی دولت کی خاطر ایسا کرے گا۔ ان کی وفات کے بعد مجھے کروڑوں کی رقم وراثت میں ملی ہے لیکن اب میری عمر بھی 40 سال ہو چکی ہے۔مجھے اس بات پر کوئی اعتراض نہیں ہو گا کہ میں جس شخص سے شادی کروں وہ پہلے سے شادی شدہ ہو، اگر وہ مجھے مساوی حقوق دینے پر تیا رہو۔ میں کسی نوجوان کنوارے لڑکے سے شادی کی خواہشمند نہیں ہوں کیونکہ میرا خیال ہے کہ یہ اس کے ساتھ انصاف نہیں ہوگا۔ میں اولاد کی خواہشمند ہوں لہٰذا مجھے کسی مخلص شخص کی ضرورت ہے ناکہ کسی ایسے شخص کی جسے صرف میری دولت سے غرض ہو۔‘‘