وائلڈ لائف میں آڈٹ کرنے والی ٹیم شکار کرتے ہو گئی شکار کرپٹ افسران ٹیم کی منت سماجت

لاہور(رپورٹ:اسد مرزا)وائلڈ لائف پنجاب کا آڈٹ کرنے والی ٹیم ہیڈ بلوکی میں مرغابی کا غیر قانونی شکار کھیلتے وائلڈ لائف ننکانہ صاحب ٹیم کے قابوآگئی جس کے بعد وائلڈ لائف ہیڈ کواٹر میں ہلچل مچ گئی ۔ڈپٹی ڈائریکٹر ایڈمن نعیم بھٹی کی سفارش پر آڈٹ ٹیم کے ارکان کو ایک مرغابی واپس دیکر لاہور بھجوا دیا۔بتایا گیا ہے کہ ڈی ڈی نعیم بھٹی نے محکمانہ گھپلوں میںپردہ ڈالنے کے لئے سنیئر حکام کی ہدایت پر آڈٹ ٹیم کود و سرکاری گاڑیوں پرغیر قانونی شکار کے لئے ہیڈ بلوکی بھجوا دیا لیکن متعلقہ افسران کو اطلاع نہ کی ۔بتایا گیا ہے کہ آڈٹ ٹیم کے ارکان دریائے راوی پر ایک مرغابی مار کرمذید مرغابیوں کا انتظار کر رہے تھے کہ وائلڈ لائف انسپکٹر ارشد ناز عملے کے ہمراہ وہاں پہنچ گیا تین ارکان کے پاس اسلحہ اور مرغابی کی تصاویر بنا لیں ۔بتایا گیا ہے کہ سرکاری گاڑی کے ڈرائیور نیازی نے بتایا کہ لاہور سے افسران نے انہیں بھجوایا ہے لیکن انسپکٹر نے ضلعی وائلڈ لائف افسر کی ہدایت پر آڈٹ ٹیم کے چالان کا پراسس شروع کر دیا اس جس پر آڈٹ ٹیم اور وائلڈ لائف ٹیم میں تلخ کلامی شروع ہو گئی ۔بتایا گیا ہے کہ ڈی جی وائلڈ لائف کاخالد عیاض نے اطلاع ملنے پرڈپٹی ڈائریکٹر ایڈمن نعیم بھٹی کی سرزنش کی اور اس معاملے کا نوٹس لیا ۔بتایا گیا ہے کہ ڈپٹی ڈائریکٹر ایڈمن نعیم بھٹی نے ضلعی وائلڈ لائف افسر کو آڈٹ ٹیم کو بغیر چالان واپس بھجوانے اور ذاتی طور پر پیش ہونے کا حکم دیا جس پر لاہور ریجن کے ڈپٹی ڈائریکٹر ظفرالاحسن نے اس واقعہ کی تمام تر ذمہ داری نعیم بھٹی پر ڈال دی کی اس نے متعلقہ عملے کو اطلاع کئے بغیر مہمانوں کو ہیڈ بلوکی غیر قانونی شکار پر بھجوایا ۔اس حوالے سے جب ڈپٹی ڈائریکٹر ظفرالاحسن سے رابطہ کیا تو انکا کہنا تھا کہ انکی گاڑی مہمانوں کو لیکر نہیں گئی اس بارے بہتر ڈی ڈی نعیم بھٹی بتا سکتے ہیں ، نعیم بھٹی کا کہنا تھا کہ وہ اس بارے بات نہیں کرنا چاہتے ۔