مکہ مکرمہ کی پہاڑیوں پر بڑی تعداد میں پاکستانی خاندانوں نے ڈیرے ڈال دیئے، بنیادی ضروریات زندگی سے محروم سنگلاخ چٹانوں پر یہ لوگ طویل عرصے سے کیا کررہے ہیں؟حیرت انگیز انکشافات

مکہ مکرمہ(این این آئی)دسیوں غیر قانونی طورپر مقیم پاکستانیوں نے مکہ مکرمہ کے مضافات میں ڈیرے ڈال لئے ۔ پہاڑوں پر چھونپڑیاں بنا کر اپنے اہل خانہ کے ہمراہ مقیم ہیں ۔سعودی اخبارکی جانب سے کئے جانے والے سروے میں کہا گیا کہ مکہ مکرمہ کے علاقے الکعکیہ کے جنوب میں مویشی منڈی کے اطراف میں پہاڑی سلسلے پر دسیو ں پاکستانی خاندان غیر قانونی طور پر آباد ہیں ۔ پتھر اور لکڑی کے تختوں سے بنی جھگیاں ہر قسم کی ضروریات زندگی سے خالی ہیں ۔ ان لوگوں کے پاس بنیادی ضروریات زندگی بھی نہیں ۔ علاقے میں رہنےوالوں

کا کہنا تھا کہ غیر قانونی طور پر مقیم یہ خاندان کچھ عرصہ قبل یہاں آکر رہنے لگے ہیں ۔ انہوں نے جس طرح یہ جھگیاں بنائی ہیں وہاں بنیادی ضروریات کا کوئی سامان نہیں ۔ سنگلاخ چٹانوں پر بچے بھی رہتے ہیں اور خواتین بھی ۔ غیر قانونی طور پر مقیم ایک شخص کا کہنا تھا کہ ہم کہاں جائیں ؟ مجبور ہو کر ان پہاڑوں میں رہ رہے ہیں ۔ اس حوالے سے قریبی آبادی کے لوگوں کا کہنا تھا کہ قانون نافذ کرنے والے ادارے کے اہلکار اس طرح کے رجحان کا سد باب کریں کیونکہ اس طرح جرائم پیشہ بھی یہاں آسکتے ہیں ۔