سٹی کورٹ کے مال خانے میں رات گئے لگنے والی آگ پر قابو پالیا گیا

سٹی کورٹ کے مال خانے میں رات گئے لگنے والی آگ پر قابو پالیا گیا جبکہ کولنگ کا عمل جاری ہے، جس میں 3 سے 4 گھنٹے لگ سکتے ہیں۔
ایم اے جناح روڈ پر واقع سٹی کورٹ کے احاطے میں مال خانے میں رات 2 بجکر 25 منٹ پر اچانک آگ بھڑک اٹھی، فائر بریگیڈ کی گاڑیوں نے موقع پر پہنچ کر آگ بجھانے کی کوشش کی تاہم آگ پر قابو نہ پانے کی صورت میں شہر بھر سے فائر ٹینڈرز کو طلب کیا گیا۔
واقعے کی اطلاع ملتے ہی آئی جی سندھ، ایڈیشنل آئی جی کراچی اور بم ڈسپوزل اسکواڈ بھی جائے وقوع پر پہنچ گئے۔
آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کا کہنا تھا کہ بظاہر ایسا لگتا ہے آگ شارٹ سرکٹ کے باعث لگی تاہم آگ پر مکمل قابو پانےکے بعد ہی نقصان کا اندازہ ہوسکے گا۔
آگ کی شدت کے باعث مال خانے کی چھت گر گئی اور وقفے وقفے سے دھماکے کی آوازیں بھی آتی رہیں، جس سے علاقے میں خوف و ہراس پیدا ہوگیا۔
ایس ایس پی سٹی شیراز نذیر کے مطابق سٹی کورٹ تھانے اور مال خانے کے پاس سی سی ٹی وی کیمرے نصب نہیں ہیں جبکہ عدالتی اوقات کار کے بعد مال خانے کو بند کردیا جاتا ہے۔
سٹی کورٹ کے مال خانے میں ملزمان سے برآمد ہونے والا سامان جمع ہوتا ہے، جسے کیس پراپرٹی بھی کہا جاتا ہے، اس سامان میں اسلحہ، بارود اور منشیات بھی شامل ہوتی ہے۔
دوسری جانب جنرل سیکریٹری کراچی بار ایسوسی ایشن اشفاق علی گلال کا کہنا ہے کہ سٹی کورٹ آج بند رہے گی اور سماعتیں نہیں ہوں گی۔