چوہدری نثار کی قومی اسمبلی آمد ،ن لیگ کے ارکان نے انہیں دیکھتے ہی کیا کردیا ؟جان کر نواز شریف کی پریشانی کی حد نہ رہے گئی

اسلام آباد (ویب ڈیسک)منگل کو قومی اسمبلی کا اجلاس ”سٹنگ ممبر“ ایاز سومرو کی وفات کے باعث ان کو خراج عقیدت پیش کرنے کے بعد کوئی کارروائی نمٹائے بغیر بدھ تک ملتوی کر دیا گیا جبکہ سینٹ اجلاس کی معمول کی کارروائی نمٹائی گئی، چوہدری نثار علی خان کچھ دیر کے لئے ایوان میں آئے تو حسب معمول ان کے گرد جھمگٹا لگ گیا، یہ بات قابل ذکر ہے جب بھی چوہدری نثار علی خان ایوان میں آتے ہیں تو رونقیں لگ جاتی ہیں، یہ بات بھی نوٹ کی گئی ہے کہ مسلم لیگی ارکان چوہدری نثار علی خان سے ان کے آئندہ لائحہ عمل کے بارے میں استفسار کر تے رہتے ہیں ۔

روزنامہ ’’ نوائے وقت‘‘ کے مطابق منگل کو چوہدری نثار علی خان اپنی نشست پر جا کر نہیں بیٹھے بلکہ وہ مولانا فضل الرحمنٰ کی نشست پر جا کر بیٹھ گئے، مسلم لیگی ارکان جن میں راجہ جاوید اخلاص، رانا تنویر ،خرم دستگیر سمیت متعد ارکان ان کے پاس آئے ، طاہرہ اورنگ زیب اور سیما جیلانی کی قیادت میں مسلم لیگی خواتین ارکان بھی ان سے ملنے آئیں، اس دوران قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ ایاز سومرو کو خراج عقیدت پیش کر رہے تھے ، چوہدری نثار علی خان کے گرد جھمگٹے کی وجہ سے سید خورشید شاہ کی تقریر میں خلل پڑنے لگا تو سپیکر سردار ایاز صادق نے ”ہاﺅس اِن آرڈر “ کرایا جس کے بعد چوہدری نثار علی خان بھی اپنی نشست پر جا کر بیٹھ گئے بعد ازاں وہ شیخ روحیل اصغر کے ہمراہ ایوان سے باہر چلے گئے اور لابی میں کھڑے ہو کر کچھ دیر تک بات کرتے رہے ۔قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف خورشید شاہ نے ایاز سومرو کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ مرحوم کی خدمات ناقابل فراموش ہیں، انہوں نے جمہوریت کے لئے بے مثال قربانیاں دیں، 18 سال کی عمر میں آمریت کے خلاف جدوجہد سے سیاسی زندگی کا آغاز کیا اور سینٹرل جیل سکھر میں میرے ساتھ رہے ،وہ مچھ جیل میں بھی قید رہے ہیں۔ ایوان میں جنوبی پنجاب کے مسلم لیگی ارکان کو ”بغاوت‘ موضوع گفتگو بنی رہی۔