وہ وقت جب ضیاءالحق نے بھٹو کا استقبال کرنے کیلئے ملتان میں تمام فوجی افسران کی بیویوں کو گلی میں کھڑا کر کے تالیاں بجوائیں لیکن ایک افسر نے اپنی بیوی کو کھڑا کرنے سے انکار کر دیا ، پھر سابق آرمی چیف نے اس افسر کے ساتھ کیا سلوک کیا ؟ تہلکہ خیز انکشاف

لاہور ( آن لائن )ضیاءالحق کے دور حکومت میں ملٹری سیکریٹری اور ٹرپل ون بریگیڈ کے سربراہ کے طور پر فرائض انجام دینے والے سابق فوجی افسر فیض علی چشتی نے کہاہے کہ جب ضیاءالحق کور کمانڈر ملتان تھے اور اس وقت ذوالفقار علی بھٹو نے بطور وزیراعظم ملتان کا دورہ کیا اور اس موقع پر ضیاءالحق نے فوجی افسران اور جوانوں کی بیگمات کو گلی میں کھڑا کر وا کر بھٹو کا استقبال کروایا اور تالیاں بجوائیں ۔

نجی ٹی وی ’پاک ‘کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے فیض علی چشتی نے کہا کہ میں اس وقت جی ایچ کیو میں ملٹری سیکریٹری تھا اور اس وقت ایک لیفٹیننٹ تھا جس نے بھٹو کے استقبال کیلئے اپنی بیوی کو گلی میں کھڑا کرنے سے انکار کر دیا تھا اور کہا تھا کہ مجھے اس پر اعتراض ہے اور اس نے اپنی بیوی کو نہیں بھیجا تھا جس کے بعد ضیاءالحق نے مجھے ٹیلیفون کیا اور کہا کہ اس افسر کو ریٹائر کر دو اس نے میری بات نہیں مانی ہے تو میں نے جواب دیا کہ میں آپ اسے کیسے ریٹائر کرسکتے ہیں غلطی آپ کی تھی جو آپ نے ایسا حکم دیا تاہم جب وہ خود آرمی چیف بنے اور انہوں نے نئے ملٹری سیکریٹری کے ذریعے اس فوجی کو عہدے سے ریٹائر کروا دیا ۔فیض علی چشتی کا کہناتھا کہ آپ اس فوجی کی ہمت دیکھیں اور تمام فوجی سچ بولتے ہیں ۔