سپریم کورٹ نے پہلی مرتبہ طاقتور کے خلاف فیصلہ کیا، عمران خان

چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ 8 دن میں نے بھی جیل میں گزارے ہیں لیکن 8 دنوں میں جیل میں چھوٹے چور ملے، کوئی بڑا ڈاکو نہیں ملا۔
وزیرآباد میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ 29 اپریل کو مینار پاکستان میں تاریخ کا سب سے بڑا جلسہ ہوگا اور ہم 29 اپریل کو اپنا منشور پیش کریں گے، جبکہ موجودہ حکومت کے بمشکل 45 دن رہ گئے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کو سلام پیش کرتے ہیں کیونکہ تاریخ میں ہماری سپریم کورٹ نے پہلی مرتبہ طاقتور کے خلاف فیصلہ کیا ہے۔
عمران خان نے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلوں سے نیا پاکستان بن رہا ہے اور خوشحالی آئے گی کیونکہ جس ملک میں کرپشن ہوتی ہے وہ ملک آگے نہیں بڑھتا۔ اللہ کا شکر ہے ہمیں کرپٹ لوگوں سے نجات ملی ہے۔
انہوں نے کہا کہ اڈیالہ جیل میں صفائی اس لیے ہورہی ہے کیونکہ بڑا ڈاکو آرہا ہے اور بڑے میاں صاحب اڈیالہ جیل جانے کی تیاری کررہے ہیں۔ نوازشریف نے 3 سو ارب روپے چوری کرکے باہر بھجوائے اور پوچھتے ہیں مجھے کیوں نکالا؟ عوام بتائیں کہ 30 ہزار کروڑ کی چوری پر سپریم کور ٹ نہ نکالے تو اور کون نکالے؟چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ چھوٹے میاں اوربڑے میاں نے ملک کا پیسا چوری کرکے باہربھجوایا۔ یہی نہیں بلککہ سابق وزیراعظم نے ادارے تباہ کردیئے ہیں۔ لندن کی سیر کیلئے کروڑوں روپے خرچ کیے جاتے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ ہم کسانوں کے ساتھ کھڑے ہیں اور عوام کو کبھی کسی کے سامنے جھکنے نہیں دیں گے۔عمران خان نے مزید کہا کہ راولپنڈی میں کارڈیالوجی ہسپتال آج تک مکمل نہیں ہوا۔ شہباز شریف اور کلثوم نواز علاج کروانے باہر لندن جاتے ہیں۔ یہاں تک کہ نواز شریف ایک ہسپتال مکمل نہیں کراسکتے اور نہ ہی ایسا ہسپتال بنا سکتے ہیں جہاں شریف خاندان کا علاج ہوسکے۔