نواز شریف کی تاحیات نا اہلی کے بعد وزیراعظم بھی پھٹ پڑے ،ایسی بات کہہ دی کہ مقتدر حلقوں میں کھلبلی مچ جائے گی

مظفر آباد ( آن لائن )وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ بد قسمتی سے یہ سلسلہ چل نکلا ہے کہ ہم کام کرنے والوں کو عدالتوں میں گھسیٹتے ہیں اور نا اہل قرار دے دیتے ہیں ،آج بھی ایک ایسا ہی فیصلہ آیا ہے ،اگر ترقی کرنی ہے تو یہ سلسلہ بند ہونا چاہیے ۔ان کا کہنا تھاکہ کہ مقبوضہ کشمیر میں معصوم لوگوں کے ساتھ جو بھی ہو رہا ہے ،ہم سب جانتے ہیں ،پاکستان گزشتہ 70سالوں مقبوضہ کشمیر کا مقدمہ لڑ رہا ہے اور مستقبل میں بھی مقبوضہ کشمیر کے لوگوں کی سفارتی ،سیاسی اور اخلاقی حمایت جاری رکھیں گے ۔

مظفر آباد میں نیلم جہلم پراجیکٹ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ اس ملک کے لیے بد قسمتی کی بات ہے کہ جو لوگ کا م کرتے ہیں اور جن کا ٹریک ریکارڈ اچھا ہوتا ہے انہیں عدالتوں میں گھسیٹا جاتا ہے ،جس ملک میں منتخب وزیراعظم کی عزت نہیں ہوگی وہاں ترقی نہیں ہو سکتی ۔انہوں نے کہا کہ یہ جو سلسلہ چل نکلا ہے کہ ہم اپنے لیڈرز کی عزت نہیں کرتے ،یہ ختم ہونا چاہیے ۔لیڈرز کے مستقبل کا فیصلہ عوام نے کرنا ہے اور عوام ہی اپنے ووٹ کی طاقت سے اس سلسلے کو ختم کریں گے ۔ شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ چین کے دورے کے دوران اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل سے ملاقات ہوئی اور ان سے بھی ایک ہی ایجنڈے پر بات ہوئی ،ہم نے کشمیر میں جاری ظلم پر اقوام متحدہ سیکریٹری جنرل کو آگاہ کیا ،انہیں بتا یا کہ یہ مسئلہ پوری دنیا میں ہیو من رائٹس کے لیے بڑا چیلنج ہے ۔انہوں نے کہا کہ لائن آف کنٹرول کا مسئلہ بھی کسی سے ڈھکا چھپا نہیں ،انڈیا میں ذرا حالات خراب ہو ں تو لائن آف کنٹرول پر فائرنگ شروع ہو جاتی ہے جس کے نتیجے میں ہزاروں سویلین شہید ہو گئے ۔

نیلم جہلم پراجیکٹ پر بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ جب ہماری حکومت آئی تو نیلم جہلم پراجیکٹ صرف 12فیصد مکمل ہوا تھا ،اس حوالے سے مختلف میٹنگز کے دوران نواز شریف کو سب لوگ کہتے تھے کہ اس پراجیکٹ کو بند کردولیکن انہوں نے اسے جاری رکھا اور آج یہ پایہ تکمیل کو پہنچا ۔انہوں نے مزید کہا کہ اس منصوبے پر 5ارب ڈالر روپے خرچ ہوئے جو کہ اس کی اصل قیمت سے تین گنا زیادہ ہیں ۔