ایران میں ہنگامے پھوٹ پڑے، ہزاروں لوگ سڑکوں پر آگئے کیونکہ۔۔۔ ہمسایہ ملک سے انتہائی خطرناک خبر آگئی

تہران(مانیٹرنگ ڈیسک) ایران کافی عرصے سے ہنگاموں اور احتجاج کی زد میں ہے، جہاں آئے روز حجاب کی پابندی اور دیگر معاملات پر شہری ہزاروں کی تعداد میں سڑکوں پرآتے رہتے ہیں۔ ڈیلی سٹار کے مطابق اب ایک بار پھر وہاں ہنگامے پھوٹ پڑے ہیں اور اس بار شہر کازرون ان کی لپیٹ میں ہے اور اب تک ان میں دو لوگوں کی ہلاکت ہو چکی ہے۔ بتایا گیا ہے کہ حکومت نے شہر کی حدود میں تبدیلی کرنی چاہی تھی تاکہ وہاں سے منتخب ہونے والے رکن پارلیمنٹ حسین رضا زادہ کو مزید تقویت دی جا سکے، لیکن شہری حکومت کے اس اقدام کے خلاف ہزاروں کی تعداد میں سڑکوں پر نکل آئے۔

رپورٹ کے مطابق یہ احتجاج کئی دن سے جاری تھااور شہر کی حد بندی روکنے کے مطالبے سے آگے بڑھ کر حکومت مخالف مظاہرے کی شکل اختیار کر چکا تھا۔ گزشتہ روز جب شہری مارچ کرتے ہوئے منسٹری آف انٹیلی جنس اینڈ سکیورٹی کے باہر جمع ہوئے تو سکیورٹی فورسز نے ان پر فائرنگ کر دی جس سے دو افراد جاں بحق ہو گئے۔ بتایا گیا ہے کہ اس احتجاج میں لوگوں نے کئی پولیس اسٹیشن اور دیگر سرکاری املاک بھی نذر آتش کیں۔ واضح رہے کہ ایران میں رواں سال جنوری میں حکومت مخالف مظاہرے شروع ہوئے تھے جو اب تک کسی نہ کسی شکل میں جاری ہیں۔ایک حکومت مخالف کارکن شاہین گوبادی کا کہنا ہے کہ ”ملک کے ملاءاس وقت جتنے کمزور ہو چکے ہیں پہلے کبھی نہ تھے، پرامن مظاہرین پر ان کے تشدد کے باوجود اب تبدیلی زیادہ دور نہیں رہ گئی۔“