ن لیگ کی حکومت ختم ہوتے ہی معیشت کا پہیہ تیزی سے چلنے لگا

کراچی ۔ (ویب‌ڈیسک) پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں کاروباری ہفتہ کے آغاز پرپیرکو تیزی کا رجحان رہا اور کے ایس ای100انڈیکس 300پوائنٹس بڑھ گیا جس سے انڈیکس 43ہزار پوائنٹس کی نفسیاتی حد پر بحال ہونے کیساتھ43200پوائنٹس کی بلند سطح پر بند ہوا ،کے ایس100انڈیکس کی43000، 43100 اور 43200کی نفسیاتی حدیںبحال ہوگئیں،کاروباری حجم گزشتہ روز کی

نسبت99.30فیصدزائدرہا،کاروباری سرگرمیوں میں تیزی کی وجہ سے مارکیٹ کے سرمائے میں 56ارب89کروڑ روپے سے زائدکااضافہ ہوا ،54فیصد سے زائدحصص کی قیمتوں میں اضافہ ہوا۔

فروخت کے دبائو اورپرافٹ ٹیکنگ کے سبب کاروبار کا آغاز منفی زون میں ٹریڈنگ کے دوران ایک موقع پر کے ایس ای100انڈیکس 42835پوائنٹس کی نچلی سطح پر بھی ریکارڈ کیاگیا تاہم عبوری حکومتوں کی قیام کی جانب مثبت پیش رفت سے سیاسی بے یقینی کی صورتحال میں کمی آنے اور سرمایہ کاروں کا اعتماد قدرے بحال ہونے کے باعث حکومتی مالیاتی اداروں، مقامی برکریج ہائوسز سمیت دیگرانسٹی ٹیوشنزکی جانب سے بینکنگ اور توانائی سیکٹرمیں خریداری کی گئی،ماہرین اسٹاک کے مطابق انتخابات میں تاخیر کے حوالے سے قیاس آرائیاں دم توڑ جانے کی وجہ سے سرمایہ کار مارکیٹ میں دلچسپی لے رہے ہیں اور کم قیمت حصص میں سرمایہ کاری کو بھی ترجیح دے رہے ہیں جس کے سبب مارکیٹ میں تیزی کا رجحان غالب ہے ۔

جس کے نتیجے میںمندی کے اثرات زائل ہوگئے اور ٹریڈنگ کے دوران کے ایس ای100 ابڈیکس43293پوائنٹس کی سطح پر بھی ریکارڈ کیاگیاتاہم اتارچڑھائو کا سلسلہ سارا دن جاری رہا۔مارکیٹ کے اختتام پر کے ایس ای100انڈیکس355.48پوائنٹس اضافے سے 43268.29 پوائنٹس پر بندہوا۔کے ایس ای30انڈیکس251.41پوائنٹس اضافے سی21242.06پوائنٹس، کے ایم آئی30انڈیکس761.78پوائنٹس اضافے سی73812.56پوائنٹس جبکہ کے ایس ای آل شیئرزانڈیکس196.95پوائنٹس اضافے سی31598.16پوائنٹس پر بندہوا۔
پیر کومجموعی طور پر337کمپنیوں کے حصص کاکاروبار ہوا، جن میں سی184کمپنیوں کے حصص کے بھائو میں اضافہ،138کمپنیوں کے حصص کے بھائو میں کمی جبکہ15کمپنیوں کے حصص کے بھائو میں استحکام رہا۔سرمایہ کاری مالیت
میں56ارب89کروڑ57لاکھ2ہزار549روپے کااضافہ ریکارڈ کیاگیاجبکہ سرمایہ کاری کی مجموعی مالیت بڑھ کر89کھرب64ارب84کروڑ8لاکھ78ہزار869روپے ہوگئی۔پیرکو11کروڑ80لاکھ42ہزار40شیئرزکا کاروبار ہواجوجمعہ کی نسبت5کروڑ88لاکھ14ہزار390شیئرززائدہیں۔

قیمتوں کے اتار چڑھائو کے حساب سے رفحان میظ کے حصص سرفہرست رہے، جس کے حصص کی قیمت298.00روپے اضافے سی8198.00روپے اورکولگیٹ پامولیوکے حصص کی قیمت156.99روپے اضافے سی3306.99روپے ہوگئی۔ نمایاں کمی سائفرٹیکسٹائل کے حصص میں ریکارڈ کی گئی، جس کے حصص کی قیمت69.98روپے کمی سی1329.73روپے اورباٹاپاک کے حصص کی قیمت 35.00روپے کمی سی2000.00روپے ہوگئی۔پہرکو بینک آف پنجاب کی سرگرمیاںایک کروڑ17لاکھ47ہزارشیئرزکے ساتھ سرفہرست رہیں، جس کے شیئرزکی قیمت2پیسے اضافے سی12.07روپے اورپاک الیکٹرون کی سرگرمیاں89لاکھ16ہزار500شیئرزکے ساتھ دوسرے نمبرپررہیں، جس کے شیئرزکی قیمت20پیسے اضافے سی38.35روپی پر بندہوئی۔