مکہ سے مدینہ کے درمیان بلٹ ٹرین سروس کا افتتاح کر دیا گیا

سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے مکہ اور مدینہ کے درمیان تیز ترین ٹرین سروس کا افتتاح کر دیا۔
پینتیس ٹرینوں پر مشتمل حرمین ایکسپریس کے ذریعے 450 کلومیٹر کا سفر 300 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے طے ہو گا۔
حکام کے مطابق حرمین ایکسپریس میں سالانہ 6 کروڑ افراد سالانہ سفر کریں گے اور اس کا مقصد حاجیوں اور عمرہ کرنے آنے والے افراد کو ٹریفک کی بہتر سہولیات فراہم کرنا ہے۔
اس ٹرین کا کمرشل آغاز آئندہ پیر سے شروع ہو جائے گا جس کے تحت مکہ اور مدینہ سے یومیہ آٹھ، آٹھ ٹرینیں چلیں گی اور سال کے آخر تک یہ تعداد 12 تک بڑھا دی جائی گی۔
سعودی عرب کے وزیرِ ٹراسنسپورٹ نبی العمودی کا کہنا تھا اس تیز ترین سفر کے ذریعے مکہ اور مدینہ کے درمیان سفر مختصر اور آسان ہو جائے گا۔
ان کا کہنا تھا کہ حج اور عمرہ کے دوران مسلمان مکہ اور مدینے کے درمیان بس کے ذریعے سفر کرتے ہیں جس میں 6 گھنٹے تک لگ جاتے ہیں لیکن اب یہی سفر دو گھنٹے پر محیط ہو جائے گا۔
مکہ کا ریلوے اسٹیشن مسجد الحرام سے چار کلو میٹر کے فاصلے پر ہے جہاں 20000 مسافروں کو سہولت دینے کی گنجائش ہے۔
حکام کے مطابق تیز ترین ریلوے لائن کا منصوبہ 6 سال کے عرصے میں دو مراحل میں مکمل ہوا اور اس کی تعمیر میں سعودی، فرانسیسی، چینی اور اسپین کی کمپبنیوں نے حصہ لیا۔