پنجاب کی سیاست میں ہلچل: عثمان بزدار کو ہٹا کر کسے سامنے لایا جا رہا ہے؟ عمران خان کے ارادے کیا ہیں ؟

لاہور(ویب ڈیسک) سیاسی تجزیہ کار سلمان غنی نے نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیرا عظم عمران خان پنجاب میں بھی اپنا رول رکھنا چاہتے ہیں۔عمران خان نے ایک کمزور وزیراعلیٰ تلاش کیا ہے۔ پنجاب میں 15نومبر کو سینیٹ کی دو سیٹوں پر الیکشن ہورہا ہے ۔

چودھری برادران سے ہمیشہ کوآرڈی نیشن جہانگیر ترین کرتے ہیں ان چارلوگوں میں سے کسی ایک نے ویڈیو لیک کی ۔چودھری سرور اور چودھری پرویز الٰہی کے درمیان بھی ایک احترام کا رشتہ ہے اور آج اس ویڈیو کے آنے کے بعد ان کی آپس میں گفتگو بھی ہوئی ہے ۔ا نہو ں نے کہا کہ جب تک پنجاب میں طاقت کا ایک مرکز نہیں ہوگا یہ کنفیوژن جاری رہے گی ۔سینئر تجزیہ کار ہارون الرشید نے ویڈیو لیک ہونے کے حوالے سے کہا ہے کہ اس کے امکان کو نظر انداز نہیں کرسکتے ۔ہر کام کا ایک طریقہ ہے ،ایک اونٹ کی ناک میں دو نکیلیں نہیں پہنائی جاسکتیں ۔ہر جگہ ایک چین آف کمانڈ ہوتی ہے ۔ عمران خان نے ایک ایسے آدمی کو وزیر اعلیٰ بنایا جو باگ اپنے ہاتھ میں نہیں رکھ سکتا،اس خلا کو چودھری پر کرنے کی کوشش کریں گے ۔چودھری سرور اور علیم خان پر کرنے کی کوشش کریں گے ۔صورتحال کا حل یہ ہے کہ ایک دن عثمان بزدار کو فارغ کردیا جائے گا۔عمران خان کو اپنا فیصلہ واپس لینا پڑے گا۔