چوروں نوں پے گئے مور،،، ایک ایس پی کی کماؤ تھانیداروں سے دوستی ’’طوطے ‘‘بھی ڈکار گیا ،،تھانیدار نے ریکوری کے نام پر سرعام ‘‘لفافہ ‘‘ تھما دیا،

لاہور(رپورٹ :اسد مرزا) پنجاب پولیس کے رینکرزافسران و ماتحتوں کی کرپشن کی داستانیں تو سب نے سنی ہونگی لیکن ایک پی ایس پی آفیسرنے مال بنانے کے لئے ماتحت عملے سے دوستی گانٹھ رکھی تھی جس کے باعث ڈی ایس پی حضرات پریشان رہے ۔بتایا گیا ہے کہ ایک سابق ایس پی سی آئی اے بھی حسب روایت ریکوری کے نام پر راتوں رات امیر ہونے کے لئے سی آئی اے میں طویل عرضہ کے’’ کماؤ پتروں ‘‘سے دوستی قائم کر لی ۔بتایا گیا ہے سی آئی اے کینٹ کے تھانیدار روف نے پرندہ چور کی نشاندہی پر شہری عاصم اور یاسر کے گھر سے 2طوطوں کی بجائے انکے تمام بیش قیمت’’ طوطے‘‘ برآمدکئے جن میں سے 6طوطے ایس پی نے اپنی گاڑی میں رکھوا لئے بعد ازاں رؤف نے بھاری رشوت لیکر غازی روڈ کے عاصم اور یاسر کو 14یوم کے بعدباعزت بری کر دیا ۔اسی طرح سی آئی اے صدر میں ایک سب انسپکٹر نے ایس پی کے سی آئی اے سنٹر آنے پر اسے باتوں میں لگا لیا اور انکے کندھے پر ہاتھ رکھ کر باتیں کرتے کرتے اچانک بھاری رقم کا پیکٹ جیب سے نکال کر ایس پی کو دیدیا جس پر ایس پی پریشان ہو گیا کہ سب کے سامنے تو تھانیدار زور سے بولا کہ سر یہ ریکوری ہے اور پیکٹ ایس پی گاڑی میں رکھ دیا ۔ایماندار ڈی ایس پی اور تمام سٹاف حیران رہ گئے ۔اسی طرح سی آئی اے سٹی میں سب انسپکٹر رانا مختار سے بھی ڈائریکٹ رابطے رہے ۔سی آئی اے کینٹ کے تھانیداروں کا کہناتھا کہ کسی افسر کی واردات کی ریکوری کے لئے انہوں نے 50ہزار فی کس ادا کئے اور پھر صاحب کا تبادلہ ہو گیا ۔