بیرون ملک سے 530ملین روپے کی غیر قانونی دولت ریکور

حکومت کا ریکوری یونٹ بیرون ملک سے پانچ سو تیس ملین روپے کی رقم ریکور کرنے میں کامیاب ہوگیا، ریکور کی جانے والی تمام رقم قومی خزانے میں جمع کرادی گئی ہے۔
تفصیلات کے مطابق حکومت کی جانب سے بیرون ملک سے غیرقانونی دولت واپس لانےمیں بڑی پیش رفت سامنے آئی، وفاقی حکومت کا ریکوری یونٹ پانچ سو تیس ملین روپے کی بڑی رقم ریکور کرنے میں کامیاب ہوگیا جبکہ مزید ریکوریاں جاری ہیں۔
ذرائع کا کہنا ہے یہ رقم غیر ملکی جائیداد اور غیر ملکی اکاونٹس کی مد میں ریکور کی گئی، اور ریکور کی جانے والی تمام رقم قومی خزانے میں جمع کرادی گئی ہیں۔
سب سے بڑی ریکوری سنگا پور میں آف شور اکاونٹ کی مد میں کی گئی۔
حکومتی ذرائع کا کہنا ہے سب سے بڑی ریکوری سنگا پور میں آف شور اکاونٹ کی مد میں کی گئی ، بعض وجوہات کی بنا پرسنگاپور آف شور اکاونٹ کی تفصیلات کوخفیہ رکھا جارہا ہے یہ رقم اکاونٹ میں خفیہ طورپر رکھی گئی تھی۔
ذرائع نے مزید بتایا ریکوری ایف آئی آے، ایف بی آر اور دوسرے اداروں کی مدد سے کی گئی ،چند ماہ میں سات ارب روپے سے زائد کی مزید ریکوری کا امکان ہے۔
بتایا جا رہا ہے کہ چھوٹے پیمانے سے شروع ریکوری میں تیزی لانے کے مزید اقدامات جاری ہیں، بیوروکریسی کے تاخیری حربوں کے باوجود ریکوری میں تیزی کے لئے قانونی رکاوٹیں دور کرنے پر کام جاری ہے۔
دوسری جانب حکومت نے ریکوریوں کے آغاز کو اہم پیشرفت قرار دے دیا ہے۔
وزیراعظم عمران خان نےاسمبلی سے پہلے خطاب میں کہا تھا کہ لوٹی گئی دولت بیرون ملک سے واپس لائیں گے، 6 ہزار سے 28 ہزار قرضہ چڑھانے والوں کا احتساب کریں گے، جو پیسہ قوم پر خرچ ہونا تھا وہ لوگوں کی جیبوں میں گیا، قوم کا پیسہ لوٹنے والوں کا کڑا احتساب کریں گے، اپنی قوم سے پیسہ اکٹھا کریں گے تاکہ ہمیں کسی کے آگے جھکنا نہ پڑے۔
بعد ازاں بیرون ممالک سے پیسے واپس لانے کے لیے ٹاسک فورس قائم کی گئی تھی، وزیر اعظم ہاؤس میں یونٹ قائم کیا گیا، یونٹ میں ایف آئی اے اور نیب کے نمائندے بھی شامل تھے۔