خاتون افسر،،کاسٹ آف انوسٹی گیشن کی رقم لیکر،فرار،،ڈی پی او کا خاتون افسر اور محکمہ کی عزت بچانے کیلئے اہلکاروں کا استحصال

لاہور(رپورٹ :اسدمرزا)سیالکوٹ میں ایس پی انوسٹی گیشن رفعت بخاری نےاکاﺅنٹنٹ نے کاسٹ آف انوسٹی گیشن کی رقم سے15لاکھ روپے لیکر سکالر شپ پر آسڑیلیا روانہ ہو گئی ۔ پولیس افسر خاتون افسر کو بلاتے رہ گئے لیکن اس نے کسی کی نہ سنی ۔ڈی پی او سیالکوٹ اسد سرفراز خان نے خاتون افسر اور محکمے کی عزت بچانے اور ماتحتوں کی حق تلفی کرتے ہوئے خردبرد کی گئی رقم کے علاوہ بچ جانے والی رقم تفتیشی افسران میں اس طرح تقسیم کروائی کہ کاغذوں کا پیٹ بھر گیا ۔پولیس انٹیلی جنس نے ایس پی رفعت بخار ی کے خلاف مفصل رپورٹ بنا کر اعلی حکام کو بھجوا دی۔رپورٹ کے مطابق بتایا گیاہے سنٹرل پولیس آفس میں اے آئی جی ایڈمن اسد سرفراز خان جب ڈی پی او سیالکوٹ تعینات تھے تو ایس پی انوسٹی گیشن رفعت بخاری نے سکالر شپ کے لئے آسڑیلیا جانا تھا اسی دوران ڈی پی او آفس کے اکاونٹنٹ نثار احمد چیمہ نے خاتون افسر رفعت بخاری کو بتایا کہ کاسٹ آف انوسٹی گیشن کی رقم وہ لے آیا ہے، تفتیشی افسران کو رقم تقسیم کرنے کے لئے کب بلایا جائے ۔بتایا گیاہے کہ خاتون افسر نے اکاونٹنٹ سے کہا کہ وہ 15 لاکھ لیکر آئے جب وہ رقم لیکر آیا تو خاتون افسر نے رقم اپنے بیگ میں رکھی اور دفتر سے روانہ ہو گئی ۔اکاﺅنٹنٹ کو جب علم ہوا کہ ایس پی رفعت بخاری ایکس پاکستان لیو پر جا رہی ہیں تو اس نے خود کو بچانے کے لئے ڈی پی او اسد سرفرازخان کو تمام صورتحال سے آگاہ کیا انہوں نے بھی میڈیم سے رابط کیا لیکن بات نا بنی ۔اس حوالے سے اکاﺅنٹنٹ نثار چیمہ نے رابطہ کرنے پر بتایا کہاس بارے تمام افسران کو علم ہے ڈی پی او صاحب نے بقایا رقم تفتیشی افسران میںکم رقم تقسیم کر کے کاغذوں کا پیٹ بڑھ لیا گیا۔بعدازاں یڈی پی او نے تمام تفتیشی افسران کو بلا کر بل کے متعلق پوچھا تو انہوں نے کہا کہ ہمیں رقم مل گئی ہے اسطرح اس معاملے پر سب نے خاموشی اختیار کر لی ۔ اس بارے سابق ڈی پی او سیالکوٹ اور موجودہ اے آئی جی ایڈمن اسد سرفرا زخان نے رابطہ کرنے پر کہا کہ اس معاملے پر جب ریفرنس آئے گا تو وہ اسکا جواب دےنگے ۔