امریکا کا اعتماد کو ٹھیس پہنچانے پر گوگل کے خلاف تحقیقات کا آغاز

امریکا کے محکمہ انصاف نے گوگل کے خلاف کاروباری معاملات میں اعتماد کو ٹھیس پہنچانے کے تحت تحقیقات کا آغاز کر دیا۔
امریکی اخبار وال اسٹریٹ جرنل نے دعویٰ کیا ہے کہ امریکی محکمہ انصاف نے گوگل کے خلاف سرچنگ کے ذریعے بزنس کے فروغ پر عدم اعتبار کا اظہار کرتے ہوئے تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے۔
گوگل کے خلاف تحقیقات کا یہ فیصلہ سرچ انجن کے ذریعے ہونے والی تجارتی سرگرمیوں میں ہیر پھیر کا الزامات سامنے آنے کے بعد کیا گیا ہے، کئی اہم پروڈکٹس سرچ کے دوران صارفین کی رسائی سے محروم رہ جاتیں جب کہ کچھ غیر معیاری پروڈکٹس سرفہرست نظر آتیں۔
قبل ازیں 2011ء میں بھی امریکی ادارے فیڈرل ٹریڈ کمیشن نے تجارتی کمپنیوں کو نقصان پہنچانے پر گوگل کے خلاف تحقیقات کا آغاز کیا تھا تاہم گوگل کی جانب سے پالیسی میں تبدیلی کی یقین دہانی پر تحقیقات ختم کردی گئی تھیں۔
امریکا سے قبل یورپی یونین نے بھی گوگل کے خلاف ایک کامیاب کارروائی کی تھی جس کے نتیجے میں گوگل کو نہ صرف لاکھوں پاؤنڈ ہرجانہ ادا کرنا پڑا تھا بلکہ صرف اس خطے کے لیے گوگل کروم اور اینڈرائیڈ سرچنگ کو علیحدہ کیا گیا تھا۔
امریکی محکمہ انصاف کے ایک اہم حکام نے وال اسٹریٹ جرنل کو نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر بتایا کہ محکمہ کے پاس امریکی کمپنیوں کو مالی نقصان پہنچانے کے ٹھوس ثبوت موجود ہیں اور موجودہ انکوائری 2011ء میں ایف ٹی سی کی جانب سے کی گئی تحقیقات کی طرح رائیگاں نہیں جائے گی۔