بھارت نے مذاکرات سے راہ فرار اختیار کی تو ہم تعاقب نہیں کریں گے: وزیرخارجہ شاہ محمود

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پاکستان ایک پر امن ملک ہے، بھارت بات چیت پر تیار نہیں ہے تو پاکستان کو بھی جلدی نہیں ہے۔
تفصیلات کے مطابق وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا بشکک میں بھارت سے متعلق میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ بھارت مذاکرات کرنا چاہے گا تو ہم مذاکرات کریں گے، پاکستان کا مؤقف ساری دنیا کے سامنے ہے۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان انتظار کرسکتا ہے، مذاکرات ہوں گے تو باوقار طریقے سے ہی ہوں گے، امن کی بات کی بھارت نے جارحیت کی اور پھر ہم نے منہ توڑ جواب دیا۔
وزیرخارجہ کا کہنا تھا کہ بھارت مذاکرات کرنا چاہے گا تو ہم مذاکرات کریں گے، بھارت نے مذاکرات سے راہ فرار اختیار کی تو ہم تعاقب نہیں کریں گے۔
ایک سوال پر شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان کی بھارتی وزیراعظم سے کوئی ملاقات طے نہیں تھی، بھارت نے وزیراعظم اور وزیرخارجہ کیلئے فضائی حدود کی اجازت مانگی، پاکستان نے جذبہ خیرسگالی کے تحت انہیں اجازت دی۔
انہوں نے بتایا کہ اجازت کے باوجود بھارت نے لمبا راستہ اختیار کیا، لمبا راستہ اختیار کرنا عکاسی ہے کہ ابھی تک اسی ذہنیت میں مبتلا ہیں، بھارتی سرکار ابھی تک الیکشن موڈ سے باہر نہیں آئی۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ نریندر مودی نے انتہا پسندی کی بنیاد پر الیکشن جیتا ہے، وہ سمجھتے ہیں اس وقت پاکستان کے ساتھ آگے بڑھنا ان کیلئے مناسب نہیں ہے۔