گرفتاری تھرڈ ورلڈ ممالک میں سیاست کا حسن ہے: سابق صدر زرداری

سابق صدر آصف علی زرداری نے وزیراعظم عمران خان کو مشورہ دیتے ہوئے کہا میری بات مانے تو استعفیٰ دے اور گھرجائے، بجٹ منظوری کا انحصار اختر مینگل پر ہے، وہ کدھربیٹھتے ہیں۔
تفصیلات کے مطابق سابق صدر آصف زرداری نے احتساب عدالت میں پیشی پر کمرہ عدالت میں میڈیا سے غیر رسمی گفتگو کی ، صحافی نے سوال کیا وزیراعظم عمران خان نے کمیشن بنانےکا اعلان کیا ہے، تو آصف زرداری نے کہا 1947 سے نہیں بناتا تو 20سال کا تو بنا دے، عمران خان مشرف دور سے تو تحقیقات کرلیں۔
آصف زرداری کا کہنا تھا بجٹ منظوری کا انحصار اختر مینگل پر ہے، وہ کدھر بیٹھتے ہیں ، عمران خان نےکیسے کہا ملک مستحکم ہوگیا؟ کیا لوگوں کی تنخواہیں بڑھ گئی ہیں؟ میرے دورمیں تو سب کی تنخواہیں بڑھتی تھیں۔
صحافی نے سوال کیا عمران خان نے کہا ہے میری جان بھی چلی جائے تو کرپٹ لوگوں کو نہیں چھوڑوں گا، سابق صدر نے جواب میں کہا یہی وہ کوئی پہلی بار نہیں کہہ رہا، وہ یہ بھی کہتا تھا کہ میں آئی ایم ایف کے پاس نہیں جاؤں گا خود کو گولی مار لوں گا۔
یاد رہے گرفتاری کے بعد ریمانڈ کے لئے احتساب عدالت میں پیشی پر سابق صدر آصف زرداری نے میڈیا سے بات چیت میں کہا تھا گرفتاری تھرڈ ورلڈ ممالک میں سیاست کا حسن ہے، میری گرفتاری پریشر ٹیکٹکس ہیں، میں نے کہا تھا کہ چیئرمین نیب کی کیا مجال، سب حکومت کرتی ہے۔
صحافی نے سوال کیا تھاجس طرح نواز شریف کو پارلیمنٹ سے آؤٹ کردیا گیا، کیا آپ پر بھی وہی فارمولا اپلائی کیا جارہا ہے، آصف علی زر داری نے جواب دیا تھا کہ فرق کیا پڑے گا، میں نہیں ہوں گا تو بلاول ہوگا، بلاول نہیں ہوگا تو آصفہ ہوگی۔
یاد رہے 10 جون کو جعلی بینک اکاؤنٹس کیس میں اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق صدر آصف زرداری اور فریال تالپور کی درخواست ضمانت مسترد کردی تھی اور گرفتار کرنے کا حکم دیا تھا، جس کے بعد نیب ٹیم نے سابق صدر آصف زرداری کو بلاول ہاؤس سے گرفتار کرلیا تھا۔
بعد ازاں سابق صدرآصف زرداری کو آج احتساب عدالت میں پیش کیا گیا ، جہاں عدالت نے آصف زرداری کو 21 جون تک جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا تھا۔