افغان کرکٹ بورڈ نے پاکستان کے لیے ناقابل یقین دعویٰ اور پیشکش کر دی

افغانستان کرکٹ بورڈ (اے سی بی) کے چیف ایگزیکٹو آفیسر (سی ای او) اسد اللہ خان خوابوں کی دنیا میں رہنے لگے ہیں۔ جنہوں نے ناصرف اپنی کرکٹ پاکستان سے کہیں بہتر قرار دیدی ہے بلکہ اس کیساتھ ہی مضحکہ خیز پیشکش بھی کر دی ہے۔

 افغانستان کرکٹ ٹیم نے آئی سی سی کرکٹ ورلڈکپ 2019ءمیں اب تک 5 میچ کھیلے ہیں اور تمام میچوں میں ہی شکست کھائی ہے جبکہ پوائنٹس ٹیبل پر یہ آخری نمبر پر موجود ہے مگر اے سی بی کے سی ای او اسد اللہ خان کا دعویٰ ہے کہ ان کی کرکٹ پاکستان سے کہیں بہتر ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت ہم کرکٹ میں پاکستان سے کہیں بہتر ہیں اور انہیں چاہئے کہ اپنی کرکٹ کی بہتری کیلئے ہم سے تکنیکی معاونت کے علاوہ کوچنگ میں بھی تعاون حاصل کریں۔

ماہرین کرکٹ نے اسد اللہ خان کے بیان کو مضحکہ خیز قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اسد اللہ خان کا دعویٰ ’دیوانے کے خواب‘ کے علاوہ کچھ بھی نہیں ہے اور انہیں چاہئے کہ وہ اس طرح کے بڑے دعوے کرنے کے بجائے اپنی کرکٹ کی بہتری پر توجہ دیں تاکہ کسی اگلے بڑے ٹورنامنٹ میں بہتر پرفارم کر سکیں۔