ناقابل شکست نیوزی لینڈ کو شکست دینے کے بعد بھی شاہینوں کے امتحان باقی، آپ بھی جانیے

گرین شرٹس کو سیمی فائنل میں جگہ بنانے کے لیے اپنے دونوں میچز لازمی جیتنا ہوں گے لیکن پھر بھی گرین شرٹس کو انگلینڈ کی ایک شکست کا انتظار کرنا پڑے گا، ساتھ ہی سری لنکا کو بھی تین میں سے ایک میچ ہارنا ہوگا۔

اگر انگلش ٹیم بھارت اور نیوزی لینڈ کے خلاف باقی اپنے دو میچز جیتنے میں کامیاب ہوگئی تو وہ 12 پوائنٹس کے ساتھ سیمی فائنل کے لیے کوالیفائی کر جائے گی، اور اگر ایک میچ جیتا تو اسے بھارت، نیوزی لینڈ، پاکستان، بنگلادیش اور سری لنکا کے میچز پر انحصار کرنا ہوگا۔

نیوزی لینڈ کو سیمی فائنل میں جانے کے لیے صرف ایک کامیابی درکار ہے، اس کے باقی دو میچز آسٹریلیا اور انگلینڈ کے خلاف ہیں، اگر کیویز ٹیم دونوں میچز ہار جاتی ہے تو اسے بھی انگلینڈ، بھارت، پاکستان، سری لنکا، اور بنگلادیش پر انحصار کرنا ہوگا۔

بنگلادیشی ٹیم کو اگر سیمی فائنل میں کوالیفائی کرنا ہے تو اسے اپنے دونوں میچز جیتنا ہوں گے جو کہ پاکستان اور بھارت کے خلاف ہیں۔

اسی طرح اگر سری لنکا کو سیمی فائنل میں جگہ بنانا ہے تو اُسے تینوں میچز جیتنا ہوں گے جو جنوبی افریقا، ویسٹ انڈیز اور بھارت کے خلاف ہیں، اگر انگلش ٹیم اپنے دونوں میچز جیت گئی اور سری لنکا بھی اپنے تینوں میچز جیتنے میں کامیاب رہی تو دونوں ٹیموں کے 12، 12 پوائنٹس ہوں گے اور سیمی فائنل میں جانے کے لیے دونوں کے درمیان رن ریٹ دیکھا جائے گا۔

اگر سری لنکن ٹیم دو میچ جیت جاتی ہے تو اس کے 10 پوائنٹس ہوجائیں گے لیکن سیمی فائنل کھیلنے کے لیے اسے دیگر ٹیموں پر انحصار کرنا ہوگا۔

ویسٹ انڈیز کی ٹیم اگر اپنے تینوں میچز جیت جاتی ہے تو اس کے 9 پوائنٹس ہوجائیں گے، لیکن پھر بھی وہ براہ راست سیمی فائنل میں نہیں پہنچ سکتی۔