کیا قبائلی اضلاع میں الیکشن تاخیر کا شکار ہو نے کی اطلاعات واقعی سچائی پر مبنی ہیں؟ جانیے پس پردہ چھپی حقیقت

 الیکشن کمیشن کا کہنا ہے قبائلی اضلاع سے کنٹرول روم میں تاحال کوئی شکایت موصول نہیں ہوئی، کہیں بھی پولنگ تاخیر سے شروع ہونے کی اطلاع نہیں ملی۔
الیکشن کمیشن نے کہا کہ کنٹرول روم انتخابی نتائج مرتب ہونے تک کام کرتا رہے گا، کنٹرول روم اے ڈی جی الیکشن کی نگرانی میں کام کر رہا ہے۔ادھر الیکشن کمیشن نے ضروری ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ انتخابی عملہ یا سیکیورٹی اہلکار کسی کو ووٹ ڈالنے کی ترغیب نہیں دے سکتے، ووٹ ڈالنے کیلئے اصل شناختی کارڈ لازمی اور فوٹو کاپی قابل قبول نہیں ہوگی، ووٹرز، انتخابی عملہ اور پولنگ سٹیشن پر موجود دیگرافراد ووٹ کی رازداری کا خیال رکھیں۔بیلٹ پیپر پر نشان لگانے کیلیے پولنگ حکام کی فراہم کردہ مہر استعمال کریں، پولنگ اسٹیشن کے اندر موبائل اور کیمرہ لانے کی اجازت نہیں ہے، مقررہ وقت کے اختتام کے بعد بھی پولنگ سٹیشن کے اندر موجود ووٹرز اپنا ووٹ ڈال سکتے ہیں۔