کرنٹ لگنے سےکراچی کے لوگ مررہے ہیں، سندھ حکومت نے سوال تک نہ کیا، وسیم اختر سندھ حکومت پر برس پڑے

میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ کراچی کا کوئی پرسان حال نہیں ہے، عوام سندھ حکومت سے تنگ آچکے ہیں۔
تفصیلات کے مطابق میئر کراچی وسیم اختر نے نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ سندھ حکومت نے کے الیکٹرک سے نہیں پوچھا کہ بجلی کی فراہمی کے لیے کیا کررہی ہے، سندھ حکومت نے آج تک کے الیکٹرک سے کوئی میٹنگ نہیں کی ہے۔
انہوں نے کہا کہ کل کہا تھا کراچی کو آفت زدہ قرار دیا جائے، گٹر میں گرنے اور کرنٹ لگنے کراچی کے لوگ مررہے ہیں، سندھ حکومت نے سوال تک نہ کیا۔
میئر کراچی نے کہا کہ شہر پانی میں ڈوبا ہوا ہے، کوئی دیکھنے والا نہیں ہے، کرنٹ سے ہلاکتیں ہوئیں یہ کسی ایک گھر تعزیت کے لیے نہیں گئے، یہ کیسی عید منارہے ہیں، لوگ اپنے بچوں کی تدفین کررہے ہیں، کے الیکٹرک کے خلاف سپریم کورٹ ازخود نوٹس لے، 30 لوگ کرنٹ لگنے سے انتقال کرگئے ہیں۔
وسیم اختر نے کہا کہ ان اختیارات کے ساتھ اگلے بلدیاتی الیکشن کرانے ہیں تو نہ کرائیں، صدر مملکت، گورنر سندھ کراچی کے ہیں کون کراچی کی ذمہ داری لے گا۔
میئر کراچی نے کہا کہ پانی کی نکاسی کے لیے ہمارے پاس صرف 12 پمپس ہیں، کراچی کے ڈسٹرکٹ ساؤتھ میں گٹر ابل رہے ہیں، پینے کا پانی نہیں ہے لوگ گندا پانی پینے پر مجبور ہیں، ملک کا آفت زدہ شہر کراچی ہے۔