سلامتی کونسل کا اجلاس 11 قراردادوں کی دوبارہ توثیق تھا: وزیراعظم عمران

وزیراعظم عمران خان نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں مقبوضہ کشمیر کی سنگین صورتحال پر بحث کا خیر مقدم کیا ہے۔
سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری بیان میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ 50 سالوں میں یہ پہلی بار ہے کہ مسئلہ کشمیر کو دنیا کے سب سے اعلیٰ سفارتی فورم پر لیا گیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں 11 قراردادیں ہیں جو کشمیریوں کے حق خود ارادیت کو تسلیم کرتی ہیں اور سلامتی کونسل کا اجلاس ان قراردادوں کی دوبارہ توثیق تھا۔

سلامتی کونسل کا حالیہ اجلاس ان تمام قرادادوں کی توثیق تھا۔ چنانچہ کشمیریوں کو درپیش تکالیف کا ازالہ کرنا اور تنازعہ کا حل یقینی بنانا اس بین الاقوامی تنظیم کی ذمہ داری ہے۔
— Imran Khan (@ImranKhanPTI) August 17, 2019
 وزیراعظم کا کہنا تھا کہ کشمیریوں کی مشکلات اور تنازع کا حل اس عالمی ادارے کی ذمہ داری ہے۔
واضح رہےکہ گزشتہ روز مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت تبدیل کیے جانے کے بعد مسئلہ کشمیر 50 سال بعد اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں زیر بحث آیا، اجلاس میں سلامتی کونسل کے 15 رکن ممالک کے مندوبین نے شرکت کی۔
پاکستان نے مسئلہ کشمیر کو سلامتی کونسل میں زیر بحث آنے پر اپنی بڑی سفارتی کامیابی قرار دیا ہے۔