بلاول بھٹو نے مودی کو نئے القاب سے نواز دیا، راہول گاندھی کیساتھ دلی ہمدردی

چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو نے کہا ہے کہ گجرات کے قصائی مودی سے اس کی اوقات کے مطابق ڈیل کرنا چاہیے، کشمیر میں مسلمانوں کو اقلیت بنانے کی سازش قطعی طور پر نامنظور ہے اور اگر ہمارے ہاں حقیقی جمہوری حکومت ہوتی تو آج کشمیر کی یہ صورتحال نہ ہوتی-
اسکردو میں پریس کانفرنس کے دوران بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھاکہ راہول گاندھی کو کشمیر جانے سے روکنا افسوسناک ہے، مودی کے وزیراعظم بننے پر ہماری خارجہ پالیسی میں تبدیلی آنی چاہیے تھی مگر ہم نے 5 سال انتظار کیا، ماضی میں جب مودی منتخب ہوا تو ہماری بھارت کیساتھ ویسی ہی خارجہ پالیسی رہی جیسی دیگر بھارتی وزرائے اعظم کیساتھ تھی-
بلاول بھٹو زرداری کا مزید کہنا ہےکہ مودی کے منتخب ہونے پر ہمیں پتا ہونا چاہیے تھا گجرات کا قصائی وزیراعظم بن رہا ہے، پاکستان نے اپنے دفترخارجہ کو کمزور کر لیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ عمران خان جو وعدے بھی گلگت بلتستان کے عوام سے کر رہا ہے وہ پورے نہیں ہوں گے، جو وعدہ بھی خان نے کیا اس پر یوٹرن لیا، صرف پیپلزپارٹی وفاقی جماعت ہے جوپورے ملک کی جماعت ہے، مریم نواز اور فریال تالپور کی گرفتاری سیاسی انتقام کی بدترین مثال ہے۔