شیخوپورہ: کارروائی وکیل برادری کیخلاف نہیں بلکہ فرد کے قابل مذمت جرم کیخلاف کی ہے: ڈی پی او

وکیلوں کے مظاہرے کے بعد پولیس بیک فٹ پر چلی گئی۔ فیروز والا کچہری میں لیڈی کانسٹیبل کو تھپڑ مارنے والے وکیل کی حمایت میں وکیلوں کے مظاہرے کے بعد پولیس بظاہر بیک فٹ پر نظر آرہی ہے۔
ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر (ڈی پی او) شیخوپورہ کا وکیل کی گرفتاری اور عدالت پیشی پر وضاحتی بیان سامنے آیا ہے۔ گزشتہ روز شیخوپورہ کی تحصیل فیروز والا میں خاتون پولیس اہلکار کو تھپڑ مارنے والے وکیل کو اُسی لیڈی کانسٹیبل نے ہتھکڑیاں لگا کر عدالت میں پیش کیا تھا ڈی پی او شیخوپورہ غازی صلاح الدین نے کہا کہ کارروائی وکیل برادری کیخلاف نہیں بلکہ فرد کے قابل مذمت جرم کیخلاف کی ہے۔
خیال رہے کہ گزشتہ روز شیخوپورہ کی تحصیل فیروز والا میں خاتون پولیس اہلکار کو تھپڑ مارنے والے وکیل کو اُسی لیڈی کانسٹیبل نے ہتھکڑیاں لگاکر عدالت میں پیش کیا تھا۔ فیروز والا کچہری میں خاتون پولیس اہلکار نے احمد مختار نامی وکیل کو لیڈیز چیکنگ پوائنٹ پر گاڑی پارک کرنے سے منع کیا تھا جس پر وکیل احمد مختار نے ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے لیڈی کانسٹیبل سے بدتمیزی کی اور تھپڑ مارا تھا۔