یمن کے حوثیوں کا امن کی جانب قدم، سعودی عرب کو سکھ کا سانس ملا

یمن کے حوثیوں نے امن قائم کرنے کے لیے بڑا اعلان کردیا، حوثیوں نے سعودی عرب پر میزائل اور ڈرون حملے روکنے کا اعلان کیا ہے اور سعودیہ سے مثبت جواب کی امید بھی ظاہر کی ہے۔
غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق یمن کے حوثیوں نے سعودی عرب پر میزائل اور ڈرون حملے روکنے کا اعلان کردیا، حملے بند کرنے کا اعلان سربراہ حوثی سیاسی کونسل مہدی المشاط نے کیا، انہوں نے کہا کہ وہ سعودی عرب پر اب ڈرون، بیلسٹک میزائل و دیگر ہتھیار نہیں چلائیں گے۔ حوثی سربراہ مہدی المشاط نے امید ظاہر کی کہ سعودی عرب ان کے اس خیر سگالی کے پیغام کا مثبت جواب دے گا ۔
حوثی رہنما کا کہنا تھا کہ یمن جنگ کے تسلسل سے کسی بھی فریق کو کوئی فائدہ نہیں ہوگا، جنگ کا تسلسل خطرناک پیشرفت کا باعث بن سکتا ہے تاہم جنگ بندی کا بڑا مقصد جانوں کا تحفظ اور عام معافی حاصل کرنا ہے۔
مہدی المشاط نے کہا کہ امن کی کوشش کا مقصد سنجیدہ مذاکرات سے قومی مفاہمت کا حصول ہے، کسی فریق کو قومی مفاہمی عمل سے باہر نہ رکھا جائے اور صنعا ایئرپورٹ کھولا اور الحدیدہ بندرگاہ تک رسائی دی جائے۔
دوسری جانب سعودی فوجی اتحاد نے حوثیوں کے اس اعلان پر فوری ردعمل سے گریز کرتے ہوئے کہا کہ یمن میں خانہ جنگی سے ہزاروں افراد ہلاک جب کہ لاکھوں قحط کا شکار ہیں۔