ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے پاکستان کو مخاطب کرکے ایسی بات کہہ دی کہ عالمی دنیا حیرانی کا شکار

ایرانی وزیر خارجہ نے سعودیہ کی جانب سے امن پیشکش کا خیر مقدم کیا ہے عراق و پاکستان سے ثالثی کیلئے سعودی درخواست پر ردعمل میں کہا کہ سعودیہ سے امن مذاکرات کے لیے تیار ہیں ،ایران علاقائی امن کے لئے ہمسایہ ممالک کے ساتھ ہمیشہ تعاون کرتا ہے۔
ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی جانب سے عراق اور پاکستان سے ثالثی کی درخواست کرنے سے متعلق اپنے ردعمل میں کہا کہ سعودی عرب موجودہ حالات میں ایران سے مذاکرات میں دلچسپی رکھتا ہے اور اگر سعودیہ خطے میں مسائل کو جنگ کی بجائے مذاکرات کی میز پر حل کرنا چاہے تو ایران بھی اس کا ساتھ دے گا.
انہوں نے کہا کہ ایران بارہا اپنے اس موقف کا اعادہ کرتا رہا ہے کہ ہم علاقائی امن کے لئے ہمسایہ ممالک کے ساتھ تعاون پر تیار ہیں.
ایرانی وزیرخارجہ جواد ظریف نے مزید کہا کہ اقوام متحدہ کی حالیہ جنرل اسمبلی کے اجلاس کے موقع پر ایران کے صدر کی ہر امن منصوبہ بھی اسی سلسلے کی کڑی ہے.
اس سے قبل سعودی تیل تنصیبات پرحملوں کے بعد عراقی اور پاکستانی حکام نے کہا ہے کہ سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان نے ان سے ایران اور سعودی عرب کے درمیان کشیدگی کو کم کرنے کیلئے ثالثی کا کردار ادا کرنے کی درخواست کی ہے۔